13

حکومت کا پاکستان میں جدید ترین الیکٹرک گاڑیوں کی تیاری کیلئے پلانٹ لگانے کا فیصلہ

لاہور (حالات نیوز ڈسک) حکومت نے بڑھتی آلودگی اور پیٹرول کی قیمتوں میں ہوشربا اضافے کا حل تلاش کر لیا، وزیراعظم کا پاکستان میں جدید ترین الیکٹرک گاڑیوں کی تیاری کیلئے پلانٹ لگانے کا فیصلہ، الیکٹرک گاڑیوں کیلئے سولر پاور اسٹیشنز بھی بنائے جائیں گے۔ نجی ٹیلی ویڑن چینل کی رپورٹ کے مطابق وزارت توانائی نے پاکستان میں مقامی سطح پر الیکٹرک گاڑیوں کی تیاری کیلئے منصوبہ بندی شروع کر دی ہے اور بہت جلد پاکستان میں بھی الیکٹرک گاڑیاں تیار کی جائیں گی۔پاکستان میں پہلے سے مقامی سطح پر دیگر گاڑیوں کی پروڈکشن جاری ہے، تاہم ابھی تک الیکٹرک گاڑیاں بیرون ملک سے درآمد کی جاتی ہیںاور اِن کی قیمت بھی کافی زیادہ ہے۔ حکومت نے پاکستان میں الیکٹرک گاڑیاں تیار کرنے کا فیصلہ بڑھتی ہوئی آلودگی اور پیٹرول کی قیمتوں میں ہوشربا اضافے کو مدِنظر رکھتے ہوئے کیا ہے۔نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق اس ضمن میں وزارت توانائی نے وزیراعظم عمران خان کی آلودگی سے پاک پاکستان کی پالیسی کو مدِنظر رکھے ہوئے اقدام ا±ٹھایا ہے۔ذرائع نے بتایا ہے کہ الیکٹرک گاڑیوں کیلئے پاکستان میں مختلف مقامات پر سولر پاور اسٹیشنز بھی بنائے جائیں گے۔ واضح رہے کہ اس سے قبل وزیراعظم عمران خان پاکستان میں تیار ہونے والی الیکٹرک موٹر سائیکل کا بھی افتتاح کر چکے ہیں۔ پاکستان کی پہلی ماحول دوست الیکٹرک بائیک کی افتتاحی تقریب اسلام آباد میں ہوئی جس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ا?گے کا سوچنے والے ممالک ترقی کرتے ہیں، ہمیں نئی نسل کے مستقبل کے لیے آج پلاننگ کرنی ہوگی، الیکٹرک وہیکل کی حوصلہ افزائی کلین اینڈ گرین مہم کا حصہ ہے، شہروں میں الیکٹرک بسیں لانا پڑیں گی، موٹرسائیکلوں کا زیادہ استعمال ہے، الیکٹرک موٹرسائیکل لانا پڑیں گی ،الیکٹرک وہیکل پالیسی کے تحت روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔وزیراعظم نے کہا کہ ملک میں زیادہ ڈالر آئیں گے تو ملک امیر ہو جائے گا، ڈالرز زیادہ باہر جائیں گے تو ملک غریب ہو جائے گا، ہمیں امپورٹ کی ضرورت نہیں ہوتی لیکن شارٹ کٹ کی وجہ سے امپورٹ کر لیتےہیں، امپورٹ سے کچھ لوگوں کو فائدہ ہوتا ہے، وزیراعظم باہر سے آتا ہے تو کہتے ہیں کتنی رقم لے کر آئے ہو، بھیک لے کر آگئے تو کامیاب دورہ ہو گیا، دولت میں اضافہ کرنا ہے تو ایکسپورٹ پر توجہ دینی ہوگی ، پروٹوکول پر خرچ رقم بچا رہے ہیں، تین سال میں 108 کروڑ روپے وزیراعظم ہاﺅس کا خرچہ کم کیا ہے، ہم عوام کے ٹیکس کی قدر کرتے ہیں، عوام کا پیسہ عوام پر ہی خرچ کریں گے۔عمران خان نے کہا کہ بدقسمتی سے ہمارے ملک میں جنگلات کم ہیں، 10 ملین درخت لگانا پڑیں گے، شہروں کو پھیلنے سے روکنے کے لیے ماسٹر پلان بنانا پڑے گا، اسلام آباد ڈیڑھ گنا بڑھ چکا ہے لیکن کوئی پلاننگ ہی نہیں ہے، تمام شہروں کے ماسٹر پلان بنا رہے ہیں، لاہور میں آلودگی سے جانوں کو خطرہ لاحق ہوگیا ہے، کوئی طویل مدتی منصوبہ نہیں ہے لیکن ہم طویل مدتی منصوبہ بندی کرنے جا رہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں