48

ڈالر کی قیمت میں کمی سے حکومتی قرضوں میں بھی بڑی کمی

لاہور (آن لائن) چیئرمین پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشنز فرنٹ (پیاف) میاں نعمان کبیر نے سینئر وائس چیئرمین پیاف و سینئر نائب صدر لاہور چیمبر اور وائس چیئرمین پیاف جاوید اقبال صدیقی کے ہمراہ پریس ریلیز جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ روپے کی قدر میں اضافہ اور ڈالر22ماہ کی کم ترین سطح 152.55روپےکی سطح پر پہنچنا حکومت کی مضبوط معاشی پالیسیوں کا ثمر ہے حکومتی اقدامات کے باعث روپے کی قدر میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔ڈالر کی قدر میں کمی کے اثرات کو صارفین تک منتقل کیا جائے تاکہ حقیقی معنوں میں فائدہ ہو اور بڑھتی ہوئی مہنگائی

کم ہو سکے ۔ روپے کی قدر میں اضافہ اور ڈالر کی قیمتوں میں کمی سے حکومتی قرضوں میں بھی 1700ارب روپے کی کمی ہوئی ہے جس سے حکومت کو بیرونی قرضوں میں بھی ریلیف ملے گا ۔ڈالر کی قیمتوں میں کمی سے بڑھتی ہوئی مہنگائی کو کنٹرول کرنے میں مدد ملے گی،پچھلے چند ماہ میں ڈالر کی قیمتوں میں اضافہ کو جواز بنا کر ملک میں اشیاء کی قیمتوں میں بے تحاشااضافہ ہوتا رہا اور مہنگائی میں اضافہ کی ایک بڑی وجہ یہ بھی تھی اب جبکہ ڈالر 21 ماہ کی کم ترین سطح پر آچکا ہے اس لیے حکومت اشیاء کی قیمتوں میں کمی لانے کیلئے اقدامات اٹھائے تاکہ ملک میں بڑھتی ہوئی مہنگائی کو کنٹرول کیا جاسکے۔  میاں نعمان کبیر نے سینئر وائس چیئرمین پیاف و سینئر نائب صدر لاہور چیمبر اور وائس چیئرمین پیاف جاوید اقبال صدیقی کے ہمراہ پریس ریلیز جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ روپے کی قدر میں اضافہ اور ڈالر22ماہ کی کم ترین سطح 152.55روپے کی سطح پر پہنچنا حکومت کی مضبوط معاشی پالیسیوں کا ثمر ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں