45

پانچ سالہ میرب کے پوسٹ مارٹم میں زیادتی کا انکشاف، والدہ کا دل خراش بیان سامنے آ گیا

فیصل آباد ( نیوز ڈیسک) فیصل آباد میں پانچ سالہ معصوم میرب کی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں سامنے ا?گئے ہے، جس میں بچی کے ساتھ زیادتی کے بعد قتل کر دیے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔ تفصیلات کے مطابق میرب کے ساتھ زیادتی کا انکشاف ہونے کے بعد والدہ نے ملزم کو دہائی دیتے ہوئے کہا کہ بیٹی کو قتل کرنے والے ملزم کو میری ا?نکھوں کے سامنے گولی مار دی جائے۔
میرب کی والدہ نے حکومت سے ملزم کی جلد گرفتاری یقینی بنانے اور پھانسی کی سزا کا مطالبہ کر دیا۔ پولیس کے مطابق پنجاب کے شہر فیصل آباد میں 5 سالہ معصوم بچی میرب کے قاتل کا سراغ نہ لگ سکا۔ تاہم تحقیقی ٹیم نے سوتیلے باپ کو بھی شامل تفتیش کر لیا ہے۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ فیصل ا?باد میں مبینہ زیادتی کے بعد قتل کی گئی میرب کا پوسٹ مارٹم مکمل ہو گیا ہے، رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ بچی کو زیادتی کے بعد گلا دبا کر قتل کیا گیا ہے۔
ولیس نے والدہ کی مدعیت میں مقدمہ درج کر لیا، والدہ کا دل خراش بیان بھی سامنے ا? گیا، انھوں نے کہا کہ میرب اپنے دادا کے ساتھ دودھ لینےگئی اور راستے میں پیچھے سے غائب ہو گئی۔بچی کی والدہ کا کہنا ہے کہ تلاش کرنے پر بچی کی لاش گھر کے قریب سے ملی، انھوں نے مطالبہ کیا کہ میری بیٹی قتل کرنے والے ملزم کو پھانسی یا میری ا?نکھوں کے سامنے گولی ماری جائے۔
پولیس کا کہنا ہے کہ پانچ سالہ بچی گزشتہ روز گھر سے باہر کھیلتے ہوئے لا پتا ہوئی تھی اور پھر اس کی لاش کھیتوں سے ملی، مجرم نے زیادتی کے بعد شناخت ظاہر ہونے کے خوف سے بچی کو گلا دبا کر قتل کیا۔واضح رہے کہ پاکستان میں چھوٹے بچوں اور بچیوں کے ساتھ زیادتی کے واقعات میں نمایاں بڑھوتری دیکھنے میں ا?ئی ہے، تاہم حکومت اس حوالے سے کوئی خاطر خواہ اقدامات کرنے میں ناکام ٹھہری ہے۔ پولیس کی جانب سے ملزمان کو کیفرکردار تک پہنچانے کے بلند و بانگ دعوے تو کیے جاتے ہیں، تاہم ملزمان کو پکڑنا پولیس کے لیے ایک بڑا چیلنج بن گیا ہے۔ حال ہی میں حکومت نے بچوں کے ساتھ زیادتی کے واقعات میں ملوث مجرمان کی جنسی صلاحیت ختم کرنے کا قانون بھی پاس کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں