50

عمرشیخ کو کوٹ لکھپت جیل منتقل کرنے کی اجازت‘چیف سیکرٹری کو طلب کرلیاگیا

اسلام آباد(کورٹ رپورٹر) سپریم کورٹ نے امریکی صحافی ڈینئل پرل قتل کیس کے ملزم عمرشیخ کو کوٹ لکھپت جیل منتقل کرنے کی اجازت دیتے ہوئے آئندہ سماعت پر چیف سیکرٹری پنجاب کو طلب کرلیا ہے. جسٹس عمرعطا بندیال نے سپریم کورٹ میں امریکی صحافی ڈینئل پرل قتل کیس کے ملزمان کی رہائی کےخلاف درخواستوں پر سماعت کی جسٹس بندیال نے دوران سماعت ریمارکس میں کہا کہ ان افراد کی رہائی کے حکم کے بعد لگا تار حراست پر عدالت مطمئن نہیں ہے.
جسٹس سجاد علی شاہ نے سوال کیا کہ اگر عمر شیخ کو جیل حدود میں ہی رکھنا ہے تو پھر مہلت کیوں مانگ رہے ہیں؟ بتائیں احمد عمر شیخ کو کب پنجاب میں منتقل کریں گے؟جسٹس عمر عطا بندیال نے کہا کہ بہت سے ہائی سیکیورٹی ایریاز ہیں عمر شیخ کو وہاں شفٹ کرسکتے ہیں، عمرشیخ کی مستقل رہائی کا حکم نہیں دے رہے صرف منتقل کر دیں. ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے عدالت کو بتایا کہ عمر شیخ کو ریسٹ ہا?س میں شفٹ کریں تو رینجرز اور فوج کی مدد لینا ہو گی، عمر شیخ کو لاہور میں جیل کی حدود میں ایک سرکاری گھر میں رکھا جائے گا اٹارنی جنرل نے عدالت کو یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ ایک ہفتے میں احمد عمر شیخ کو پنجاب منتقل کر دیں گے اس پر سپریم کورٹ نے عمر شیخ کو کوٹ لکھپت جیل منتقل کرنے کی اجازت دے دی اور کہا کہ پنجاب حکومت عدالتی حکم پر متعلقہ افراد کو سہولیات فراہم کرے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں