92

لاپتا افرادکیس، آئی جی سندھ کی عدم پیشی پر عدالت برہم

لاپتا افرادکیس، آئی جی سندھ کی عدم پیشی پر عدالت برہم

لاپتا افراد کی بازیابی سے متعلق درخواستوں کی سماعت کے دوران سندھ ہائیکورٹ نے آئی جی سندھ مشتاق مہر کی عدم پیشی پر اظہار برہمی کیا ہے۔

لاپتا افرادکی بازیابی سے متعلق درخواستوں کی سندھ ہائیکورٹ میں سماعت ہوئی۔

دوران سماعت عدالت نے استفسار کیا کہ آئی جی سندھ کہاں ہیں؟ کیوں پیش نہیں ہوئے؟ جس پر سرکاری وکیل نے کہا کہ آئی جی سندھ کی جانب سے اے آئی جی لیگل پیش ہوئے ہیں۔

جسٹس کے کے آغا نے پھر استفسار کیا کہ اے آئی جی لیگل کو آئی جی کی پیش کردہ رپورٹ پر دستخط کرنے کی بھی اجازت ہے؟

اے آئی جی لیگل کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ لاپتا شہری ریاست اللّٰہ مختلف کیسز میں مفرور ہے۔

عدالت نے ریمارکس دیئے کہ مفرور ملزمان کو تلاش کرنا بھی ریاست کی ذمہ داری ہے۔

عدالت نے شہری ریاست اللّٰہ کو تلاش کر کے رپورٹ پیش کرنے کا حکم دے دیا۔

عدالت نے حراستی مراکز میں قید شہریوں کی تفصیلات پیش نہ کرنے پر بھی اظہار تشویش کیا۔

سرکاری وکیل کا کہنا تھا کہ 2019ء میں حراستی مراکز میں قید شہریوں کی تفصیلات عدالت میں پیش کی گئی تھیں۔

عدالت نے وفاقی سیکریٹری داخلہ سے تازہ رپورٹ طلب کر لی، ساتھ ہی عدالت نے آئی جی سندھ، سیکریٹری داخلہ اور دیگر سے 21 اپریل کو پیش رفت رپورٹ بھی طلب کرلی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں