امریکا پابندیاں ہٹادے توایران جوہری سمجھوتے کے تقاضوں کو پوراکرے گا خامنہ ای کا بڑا اعلان

واشنگٹن(این این آئی)اگر امریکا ایران کے خلاف عاید کردہ تمام پابندیوں کو ہٹا دے تو وہ جوہری سمجھوتے کے تمام تقاضوں کو پورا کرنے کو تیار ہوگا۔میڈیارپورٹس کے مطابق ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای نے ایک نشری تقریر میں کہا کہ امریکا کو تمام پابندیاں ختم کرنی چاہییں۔اس کے بعد ہم اسامر کی تصدیق کریں گے کہ یہ پابندیاں فی الواقع ہٹا دی گئی ہیں۔پھر ہم کسی حیل وحجت کے بغیر جوہری سمجھوتے کے تمام تقاضوں کو پورا کریں گے۔انھوں نے کہا کہ امریکا کے وعدے قابل اعتبارنہیں۔اس لیے امریکا کو اقدام کرنے کی ضرورت ہے۔خامنہ

ای کا کہنا تھا کہ ایران بہت زیادہ ضبط وتحمل کا حامل ہے اور اس کو کوئی سمجھوتا طے کرنے کی کوئی جلدی نہیں۔ہم اس بات میں یقین رکھتے ہیں کہ ان مواقع کو ضائع نہیں ہونا چاہیے لیکن ہم عجلت کا مظاہرہ نہیں کریں گے کیونکہ بعض اوقات خطرہ فائدے سے زیادہ بڑا ہوتا ہے۔خامنہ ای کا کہنا تھا کہ وہ امریکی عہدے داروں کی اس بات سے اتفاق کرتے ہیں کہ جوہری سمجھوتے کے بعد سے دنیا تبدیل ہوچکی ہے مگرانھوں نے دعوی کیا کہ یہ تبدیلی ایران کے حق میں رونما ہوئی ہے اور ایران 2015 ،2016 کے بعد زیادہ مضبوط ہوچکا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اگر جوہری سمجھوتے میں کوئی تبدیلی رونما ہونا ہے تو یہ ایران کے مفاد میں ہونی چاہیے۔ہم نے پابندیوں کو غیرموثربنا دیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں