ملک میں مہنگائی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی

اس وقت مہنگائی کی شرح 21.3 فیصد کی ریکارڈ سطح پر ہے‘ گزشتہ سال کی نسبت مہنگائی میں 13.8 فیصد اضافہ ہوا ۔ ادارہ شماریات کے اعداد و شمار

اسلام آباد ( نیوز ڈیسک ) ملک میں مہنگائی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی۔ وفاقی ادارہ شماریات کی جانب سے مہنگائی کے حوالے سے جاری کیے گئے تازہ ترین اعداد و شمار سے معلوم ہوا ہے کہ گزشتہ سال کے مقابلے میں مہنگائی میں 13.8 فیصد اضافہ ہوا اور اس وقت ملک میں مہنگائی کی شرح 21.3 فیصد کی ریکارڈ سطح پر پہنچ چکی ہے ، شہری علاقوں میں مہنگائی کی شرح 19.8 فیصد دیکھی گئی جب کہ دیہی علاقوں میں مہنگائی کی شرح 23.6 فیصد اضافہ ہوا۔
ادھر ملک میں ایک بار پھر پیٹرول مہنگا ہونے پر لاہور میں شہریوں نے موٹرسائیکل کا علامتی جنازہ اٹھا لیا ، یہ اس وقت ہوا جب حکومت کی جانب سے ایک دفعہ پھر پیڑول کی قیمت میں اضافے پر شہریوں کی جانب سے احتجاج کیا گیا ، جہاں مظاہرین نے موٹرسائیکل کا علامتی جنازہ بھی نکالا ، اس احتجاج میں جماعت اسلامی کے رہنماء احمد سلمان بلوچ بھی شریک ہوئے۔

دوسری طرف سابق وزیر خزانہ شوکت ترین نے کہا ہے کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں ابھی مزید بڑھیں گی کیوں کہ پیٹرولیم مصنوعات پر ہر ماہ 50 روپے تک اضافے کیا جائے گا ، حکومت 17 فیصد پیٹرولیم مصنوعات پر سیلز ٹیکس لگائے گی ، یہ عوام کو ریلیف نہیں دیں گے بلکہ ہر ماہ 50 روپے تک اضافہ کیا جائے گا ، جس کی مدد سے حکومت 855 ارب روپے پی ڈی ایل کی مد میں ریکور کرے گی۔
شوکت ترین نے کہا کہ 10 روپے ہر ماہ بڑھانے سے بھی 855 ارب روپے جمع نہیں ہوں گے ، اس لیے سیلز ٹیکس اور پی ڈی ایل کی رقم ملا کر یہ 50 روپے تک ماہانہ قیمت بڑھائیں گے ، ہم آئی ایم ایف کے ساتھ اتنی بڑی لیوی پر معاہدہ ہی نہ کرتے اسی لیے ہمارے دور میں عوام کو پیٹرولیم مصنوعات پر ریلیف دیا جارہا تھا ، ہم نے روس سے سستا تیل خرید کر عوام کو مہنگا پیٹرول خریدنے سے بچانا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں