57

شیر ایک بار پھر دھاڑا، وقار یونس کی اعتماد کا ووٹ لینے پر وزیراعظم عمران ..

لاہور (بیورو رپورٹ) وزیراعظم عمران خان کی جانب سے قومی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ حاصل کرنے کے بعد قومی کرکٹرز کا رد عمل بھی سامنے آگیا۔ تفصیلات کے مطابق آج وزیراعظم عمران خان کے لیے اعتماد کے ووٹ کے لیے سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی زیر صدارت قومی اسمبلی کا خصوصی اجلاس سجا۔قومی اسمبلی کے اجلاس کا آغاز تلاوت قران پاک سے کیا گیا۔
بعدازاں نعت رسول مقبول پیش کی گئی اور قومی ترانہ بجایا گیا جس پر تمام اراکین اسمبلی اور قومی اسمبلی میں موجود افراد احترام میں کھڑے ہوئے۔ وزیراعظم عمران خان وقت پر قومی اسمبلی پہنچے۔اراکین اسمبلی نے ان کا بھرپور استقبال کیا۔مہمان گیلری میں وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کے علاوہ تینوں وزرائے اعلیٰ موجود تھے۔
گورنر سندھ اور گورنر پنجاب بھی گیلری میں موجود تھے۔پی ٹی آئی اور اتحادیوں کے 179 اراکین قومی اسمبلی کے اجلاس میں شریک ہوئے۔پی ڈی ایم کے رہنما محسن داوڑ بھی اجلاس میں شریک ہوئے۔مراد سعید اور فواد چوہدری نے محسن داوڑ کا خیر مقدم کیا۔جب کہ جے آئی کے رہنما عبدالاکبر چترالی بھی اجلاس میں شریک ہوئے،اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم ) نے آج ہونیوالے قومی اسمبلی کے اجلاس کے بائیکاٹ کا اعلان کررکھا ہے،پی ڈی ایم کا کوئی رکن ایوان میں موجود نہیں تھا۔مستعفی رکن اسمبلی فیصل واوڈا اور معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان بھی مہمان گیلری میں موجود تھے۔ اسپیکر قومی اسمبلی نے ووٹنگ کا طریقہ کار بتایا اور اسمبلی کے گیٹ بند کرنے کی ہدایت جاری کی۔ قومی اسمبلی میں آج ہونے والے اجلاس میں وزیراعظم پر اعتماد کے ووٹ کی قرارداد پیش کی گئی۔قومی اسمبلی کے ہفتہ کو ہونے والے اجلاس کا ایجنڈا جاری کیا گیا۔
جنڈے کے مطابق قومی اسمبلی کے اجلاس میں وزیراعظم پر اعتماد کے ووٹ کی قرارداد پیش کی گئی۔قرارداد وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے پیش کی۔قرار داد کے متن میں کہا گیا کہ ایوان وزیراعظم پر اعتما دکا اظہار کرتا ہے، ایوان ا?رٹیکل 7/91 کے تحت وزیراعظم پراعتماد کا اظہارکرتا ہے۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کے قرار داد پیش کرنے کے بعد اعتماد کے ووٹ پر کارروائی شروع کی گئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں