39

جہاں کتے کاٹنے کا واقعہ ہوا ا ±س علاقے کا ایم پی اے معطل ہو گا

کراچی (بیورو رپورٹ) سندھ ہائیکورٹ سکھر بینچ نے کہا ہے کہ جہاں کتے کاٹنے کا واقعہ ہوا اس علاقے کا ایم پی اے معطل ہو گا۔تفصیلات کے مطابق آج سندھ ہائیکورٹ میں آوارہ کتوں کے کاٹنے سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی جس میں عدالت نے سخت ریمارکس دئیے۔سماعت کے دوران آفتاب احمد نے ریمارکس دئیے کہ کتے کاٹنے کا واقعہ جہاں ہوا اس علاقے کے رکن صوبائی اسمبلی کو معطل کیا جائے گا۔
اس پر سرکاری وکیل نے کہا کہ کتے کے کاٹنے کے واقعات سے ایم پی ایز کا تعلق نہیں،معز زجج نے کہا کہ ہمیں پتا ہے کہ یہ افسران فنڈ سے کسے کمیشن دیتے ہیں۔ہمارا منہ نہ کھلوایا جائے تو بہتر رہے گا۔عوام کا تحفظ کرنا ممبر صوبائی اسمبلی کا فرض ہے۔عدالت نے کہا کہ کتے کے کاٹنے کا واقعہ جہاں پیش آیا وہاں کا ایم پی اے سینیٹ انتخابات میں بھی ووٹ نہیں دے سکے گا۔واقعہ پیش آنے پر متعلقہ افسران کی تنخواہ بند اور سر پلس میں رکھا جائے گا۔سندھ ہائیکورٹ سکھر بینچ میں سماعت کے موقع پر افسران نے رپورٹس پیش کیں جس پر عدالت نے عدم اطمینان اظہار کیا ، سماعت 16مارچ تک ملتوی کر دی۔خیال رہے کہ سندھ کے ساتھ ساتھ پنجاب میں بھی کتوں کے کاٹنے کے واقعات بڑھ رہے ہیں۔ پنجاب میںکتوں کے کاٹنے کے واقعات میں اضافے کیخلاف پنجاب اسمبلی میں قرارداد جمع کروائی گئی تھی۔مسلم لیگ (ن) کی رکن سمیرا کومل کی جانب سے جمع کرائی گئی قرار داد کے متن میں کہاگیا کہ پنجاب میں ا?وارہ کتوں کے کاٹنے کے واقعات میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے،کتوں کے کاٹنے کے واقعات میں اضافہ ضلعی انتظامیہ کی کارکردگی پرسوالیہ نشان ہے۔ وزیراعلیٰ پنجاب ہر واقعے کے بعد نوٹس لینے کی خبر جاری کردیتے ہیںجبکہ عملی طور پر انتظامیہ وزیراعلیٰ کے احکامات کو نظر انداز کررہی ہے۔پنجاب میں سندھ کی نسبت کتے کے کاٹے کے واقعات زیادہ سامنے آرہے ہیں۔قرار داد میں مطالبہ کیاگیا کہ ا?وارہ کتوں کے خلاف تمام اضلاع میں کریک ڈاﺅن کیا جائے۔قصور میں کتوں کے کاٹنے سے ہلاک ہونے والے بچے عثمان کے اہلخانہ کی مالی مدد کی جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں