اسلام آباد،تھانہ گولڑہ کی حدود میں پانچ ماہ قبل قتل ہو نیوالے نوجوان کے قاتلوں کا تاحال کوئی سراغ نہ مل سکا

پولیس مقتول کے لواحقین سے تعاون کرنے سے گریزاں ،ایس ایس پی ،ڈی آئی جی ،آئی جی کو دی جانیوالی درخواستیں بھی رائیگاں

اسلام آباد(کرائم ڈیسک) وفاقی دارلحکومت کے تھانہ گولڑہ کی حدود میں پانچ ماہ قبل قتل ہونے والے نوجوان کے قاتلوں کا تاحال کوئی سراغ نہ مل سکا ہے ، پولیس مقتول کے لواحقین سے تعاون کرنے سے گریزاں ہے ،ایس ایس پی ،ڈی آئی جی ،آئی جی کو دی جانیوالی درخواستیں بھی رائیگاں چلی گئیں،معلومات کے مطابق پانچ ماہ قبل تھانہ گولڑہ کی حدود میں ارشاد ولد عبدالقیوم کو نامعلوم افراد نے رات کی تاریکی میں سر میں گولی مار کر سڑک کنارے پھینک دیا تھا ،جس پر پولیس نے رپٹ نمبر 376درج کرکے تفتیش شروع کر دی تھی،اس حوالہ سے مقتول کی نئی نویلی بننے والی دلہن سمیت انکے بھائیوںکو شامل تفتیش کیا گیا تھا لیکن وہ بے گناہ قرار پائے تھے،یہاں ذرائع کا کہنا ہے کہ مقتول کے خاندان کی پرانی رنجش انکے آبائی گائوں مانسہرہ میں تھی اور انہیں شک ہے کہ قتل کے کھرے شائد وہاں تک نکل جائیں،مقتول کے بھائی فیاض نے بتایا کہ پولیس تعاون نہیں کر رہی ،کم از کم ہمارے شکوک و شبہات دور کرنے کے لیے بتائے جانیوالے ملزمان کو تلاش کر کے شامل تفتیش تو کرے،انہوںنے آئی جی قاضی جمیل الرحمن ،ایس ایس پی سے التماس کی ہے کہ وہ انکے بھائی مقتول ارشاد کے قتل میں ملوث افراد کو تلاش کر کے کیفر کردار تک پہنچایا جائے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں