68

رمضان کی آمد سے قبل چینی مافیاپھر سرگرم قیمت میں ہوشربا اضافہ

کراچی(این این آئی)تمام ترحکومتی اقدامات کے باوجودچینی کی قیمتوں میں اضافے کو روکا نہیں جاسکا ہے۔تفصیلات کے مطابق رمضان کی آمد سے قبل ایک بار پھر چینی مافیا سرگرم ہوگیا ہے اور انہوں نے چینی کی قیمتوں میں من مانا اضافہ کردیا ہے، ادارہ شماریات کی جانب سے جاری اعدادو شمار بھی ملک بھر میں چینی کی قیمتوں میں ہوشربا اضافے کا اعتراف کررہے ہیں۔ادارہ شماریات کے مطابق گذشتہ ایک ہفتے کے دوران ملک کے بڑے شہروں میں چینی کی فی کلو قیمت میں 4 سے 5روپے کا اضافہ دیکھنے میں آیا، کراچی میں گذشتہ ایک ہفتے کے دوران فی

کلو چینی کی قیمت 5روپے اضافے کے ساتھ 100روپے فی کلو تک جاپہنچی ہے جبکہ لاہور میں ایک ہفتے کے دوران چینی کی قیمتوں پر 4 روپے فی کلو کا اضافہ دیکھا گیا۔دوسری جانب یوٹیلیٹی اسٹورز ذرائع نے بتایا کہ اس وقت بھی یوٹیلیٹی اسٹورز پر چینی 68 فی کلو کے حساب سے صارفین کو دی جارہی ہے، یوٹیلیٹی اسٹورز کے پاس وافر مقدار میں چینی کا ذخیرہ موجود ہے، یوٹیلیٹی اسٹورز پر چینی کی کمی سے متعلق خبروں میں کوئی صداقت نہیں۔ذرائع نے بتایاکہ چینی کی ذخیرہ اندوزی کو روکنے کے لئے ایک شخص کو ایک وقت میں صرف چار کلو چینی خریدنیکی اجازت ہے، جس کی وجہ یہ ہے کہ مارکیٹ قیمتوں میں فرق سے ذخیرہ اندوزی کا خطرہ ہوتا ہے۔ یوٹیلیٹی اسٹورز ذرائع نے بتایا کہ حکومت کی جانب سے دی گئی اشیا پر سبسڈی دینے کا عمل جاری ہے، کچھ اشیا ء ایسی بھی ہیں جن پر سبسڈی نہیں ہے اور وہ اپنی قیمتوں میں فروخت کی جارہی ہیں،یوٹیلیٹی اسٹورزذرائع نے تصدیق کی کہ حکومت کی جانب سے گھی اور خوردنی تیل پر سسبڈی ختم ہونے سے خوردنی تیل کی قیمتیں 200 فی کلو تک جاپہنچی ہیںجبکہ بیس کلو آٹے کے تھیلے پر 170 روپے کی سبسڈی دی جارہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں