اسلام آ باد پولیس شہر اقتدار میں غیر قانونی اسلحہ رکھنے والے عناصر کیخلاف متحرک، سنیپ چیکنگ کے دوران 16 ملزمان گرفتار

قبضے سے 3 کلاشنکوف، 9 پسٹل، 1 ایم پی فائیو گن،1 بارہ بور گن ایک 223 بور گن و ایمونیشن، آہنی مکہ اور منشیات برآمد پانچ ویگو ڈالے ایک پراڈو گاڑی اور بغیر کاغذات کے 12موٹر سائیکلز کو بھی مختلف تھانہ جات میں منتقل کیا گیا، غیر قانونی آتش بازی کا سامان بھی بڑی تعداد میں قبضہ پولیس میں لیا گیا

اسلام آباد (کرائم ڈیسک) اسلام آ باد پولیس شہر اقتدار میں غیر قانونی اسلحہ رکھنے والے عناصر کے خلاف متحرک، روزانہ کی بنیاد پر شروع کی گئی سپیشل مہم کے تحت گزشتہ رات سنیپ چیکنگ کے دوران 16 ملزمان کو گرفتار کرکے قبضے سے 3 کلاشنکوف، 9 پسٹل، 1 ایم پی فائیو گن،1 بارہ بور گن ایک 223 بور گن و ایمونیشن، آہنی مکہ اور منشیات برآمد جبکہ پانچ ویگو ڈالے ایک پراڈو گاڑی اور بغیر کاغذات کے 12موٹر سائیکلز کو بھی مختلف تھانہ جات میں منتقل کیا گیا، غیر قانونی آتش بازی کا سامان بھی بڑی تعداد میں قبضہ پولیس میں لیا گیا، مقدمات درج کرکے مزید تحقیقات کا آغازکردیاگیا۔

تفصیلات کے مطابق آئی جی اسلام آباد قاضی جمیل الرحمان کی خصوصی ہدایت پر روزانہ کی بنیاد پر ضلع بھر میں سنیپ چیکنگ کے ذریعے جرائم پیشہ عناصر کے گر د گھیرا تنگ کر رکھا ہے، سنیپ چیکنگ میں زونل ایس پیز، ایس ڈی پی او، اور ایس ایچ اوز خود حصہ لے رہے ہیں، جس کے خاطرخواہ نتائج حاصل ہوئے ہیں، گزشتہ رات رورل اور سٹی زون کے مختلف تھانوں کی پولیس ٹیموں نے سنیپ چیکنگ میں حصہ لیا دوران چیکنگ غیر قانونی اسلحہ رکھنے والے 16 ملزمان گرفتار، قبضے سے 3 کلاشنکوف، 9 پسٹل، 1 ایم پی فائیو گن،1 بارہ بور گن ایک 223 بورگن و ایمونیشن، ایک آ ہنی مکہ، منشیات برآمد،پانچ ویگو ڈالے ایک پراڈو گاڑی اور بغیر کاغذات کے 12موٹر سائیکلز کو بھی مختلف تھانہ جات میں منتقل کیا گیا،غیر قانونی آتش بازی کا سامان بھی بڑی تعداد میں قبضہ پولیس میں لیا گیا، مقدمات درج کرکے مزید تحقیقات کا آغازکردیا گیا، آئی جی اسلام آباد کے احکاما ت کی روشنی میں ضلع بھر میں سنیپ چیکنگ کا عمل شروع کیا گیا جس کی نگرانی برائے راست ڈی آئی جی آپریشنز افضال احمد کوثر کررہے ہیں، سنیپ چیکنگ کا مقصد وفاقی دارلحکومت کو امن کا گہوارہ بناناہے اور غیر قانونی اسلحہ سے پاک کرنا ہے، اسلام آباد کی شہریوں کی جان و مال کی حفاظت کو یقینی بنانا اولین ترجیح ہے، پولیس کے ان اقدامات سے جرائم میں نمایاں کمی واقع ہوتی نظر آرہی ہے اس وقت تک یہ عمل جاری رہے گا جب تک شہر اقتدار جرائم پیشہ عناصر سے پاک نہیں ہو جاتا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں