سندھ حکومت نے 100کلوگرام گندم کی سرکاری قیمت 4875 روپے مقرر کردی

عوام کو اگلے ہفتے سے آٹا 55 روپے فی کلو دستیاب ہوگا، سندھ میں سرکاری گندم کا اجراء 15اکتوبر کیا جائے گا، اعلامیہ جاری

کراچی (بیورو رپورٹ) سندھ حکومت نے اڑھائی من گندم کی سرکاری قیمت 4875 روپے مقرر کردی، عوام کو اگلے ہفتے سے آٹا 55 روپے فی کلو دستیاب ہوگا، سندھ میں سرکاری گندم کا اجراء 15اکتوبر کیا جائے گا۔ اعلامیہ کے مطابق سندھ حکومت نے عوام کو سستے آٹے کی فراہمی یقینی بنانے کیلئے اڑھائی من گندم کی سرکاری قیمت 4875 روپے مقرر کردی ہے۔
حکومت سرکاری گندم کا اجراء 15 اکتوبر سے کرنا شروع کرے گی۔ فلورز ملز کو سستی گندم کی فراہمی سے آٹے کی قیمت میں کمی ہوجائے گی، فلورز ملز کا کہنا ہے کہ سستی گندم کے بعد صوبے کی عوام کو اگلے ہفتے پیر یا منگل سے آٹا 55 روپے فی کلو دستیاب ہوگا۔ بتایا گیا ہے کہ کراچی میں جو فائن آٹا استعمال ہورہا ہے اس کی قیمت پنجاب میں بھی 70 روپے سے زائد ہے۔

صوبائی وزیر خوراک نے کہا کہ پنجاب میں زیادہ گندم کی پیداوار کے باوجود آٹے کی قلت اور قیمتوں میں اضافہ ہوا، پنجاب میں جس معیار کا آٹا استعمال ہوتا ہے وہ کراچی میں استعمال نہیں ہوتا، گندم پروکیومنٹ کا مقصد آخری 5 ماہ میں آٹے کی بڑھتی قیمتوں کو کنٹرول کرنا ہوتا ہے۔دوسری جانب صوبائی وزیر برائے ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن و انسداد منشیات اور پارلیمانی امور و خوراک مکیش کمار چاو لہ نے گورنر سندھ ڈاکٹر عمران اسماعیل کے سندھ میں آٹے کی قیمتوں پر بیان کو ان کی لاعلمی قرار دیتے ہوئے کہا کہ گزشتہ کئی سالوں سے حکومت سندھ اکتوبر کے آخر میں گندم ریلیز کرتی ہے اور امید ہے کہ گندم کے ریلیز ہوتے ہی سندھ میں آٹے کی قیمتوں میں نمایاں کمی واقع ہوگی۔
آج بھی پنجاب میں ایک کلو گرام آٹا 75 روپے کا فروخت ہورہا ہے جبکہ گندم کے حساب سے پنجاب میں سب سے زیادہ گندم پیدا ہوتی ہے۔ صوبائی وزیر برائے خوراک مکیش کمار چاو لہ نے کہا کہ گورنر سندھ صاحب نے بغیر معلومات حاصل کئے بغیر اپنے سیاسی پوائنٹ اسکورنگ کے لئے حکومت سندھ کے خلاف بیان دے دیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت سندھ کے پاس اپنے عوام کی ضرورت کے مطابق گندم وافر مقدار میں موجود ہے۔ جہاں تک مہنگائی کی بات ہے تو چینی، پٹرول اور دیگر اشیاخوردونوش کی قیمتیں تو وفاقی حکومت کا شعبہ ہے کیا اس نے ان اشیاکی قیمتیں کنٹرول کر رکھی ہیں۔ عوام مہنگائی کی چکی میں پس رہی ہے لیکن وفاقی حکومت کو غریب عوام کی حالت زار سے کوئی دلچسپی نہیں ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں