شارجہ سے کراچی آنے والی قومی ایئرلائن کی پرواز حادثے سے بال بال بچ گئی

پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائن کی پرواز سے کئی پرندے ٹکرا گئے جس کے باعث جہاز کے ونگ اور اسکرین کو نقصان پہنچا

کراچی (حالات نیوز ڈیسک) شارجہ سے کراچی آنے والی پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائن کی پرواز سے کئی پرندے ٹکرا گئے جس کے باعث جہاز کے ونگ کو نقصان پہنچا اور طیارہ حادثے سے بال بال بچ گیا۔ تفصیلات کے مطابق شارجہ سے کراچی آنے والی پی آئی اے کی پرواز کے طیارے کے سامنے اور ونگ سے کئی پرندے ٹکرائے جس کے سبب مذکورہ حصوں کو نقصان شید پہنچا تاہم کپتان نے مہارت کا مظاہرہ کرتے ہوئے طیارے کو بحفاظت کراچی ائیر پورٹ پر اتار لیا۔
بتایا گیا ہے کہ لینڈنگ سے قبل طیارے سے پرندے ٹکرانے کی وجہ سے ایئر بس 320 طیارے کے ونگ اسکرین کو شدید نقصان پہنچا جب کہ پرندے ٹکرانے کے باعث جہاز کے ونگ بھی متاثر ہوئے ، مذکورہ طیارے میں 100 سے زائد مسافر سوار تھے اور کپتان نے طیارے کو بحفاظت کراچی ایئرپورٹ اتارا تاہم پرندے ٹکرانے کی وجہ سے طیارے کو گراؤنڈ کردیا گیا جس کی وجہ سے کراچی سے لاہور جانے والی پرواز بھی منسوخ کردی گئی۔

یاد رہے کہ 5 اکتوبر کو لاہور سے استنبول کے لیے اڑان بھرنے والے طیارے سے بھی پرندہ ٹکرا گیا جس کے باعث طیارے کو شدید نقصان پہنچا ، طیارے میں 350 مسافر سوار تھے ،پائلٹ نے طیارے کو بحفاظت ایئرپورٹ پر اتار لیا ،جس کے بعد غیر ملکی ائیرلائن نے مسافروں کو طیارے میں تاخیر کے باعث مسافروں گھر جانے کا مشورہ دیا تاہم طیارے کی روانگی غیر معینہ مدت کے لیے تاخیر ہونے پر مسافروں نے احتجاج بھی کیا اور مسافروں نے گھر جانے کی بجائے ائیر لائن سے ہوٹلوں میں رہائش دینے کا مطالبہ کیا ۔
اس سے دو روز قبل نیو اسلام آباد ایئرپورٹ پر نجی آئر لائن کے طیارے سے پرندہ ٹکرانے سے جہاز بڑے حادثے سے بال بال بچ گیا لیکن پرندہ ٹکرانے سے طیارے میں فنی خرابی پیدا ہو گئی ، جس کے بعد پائلٹ نے حاضر دماغی سے طیارے کو بحفاظت اتار لیا ، نجی ائیرلائن کی پرواز ای آر 500 کراچی سے اسلام آباد آ رہی تھی کہ لینڈنگ سے قبل پرندہ جہاز سے زور دار طریقے سے ٹکرایا ، ٹیکنیکل خرابی کے باعث جہاز کی وآپس کراچی روانگی تاخیر کا شکار ہو گئی ، واپس جانے والے مسافروں کو سی ٹو لاونج میں بیٹھا گیا۔
سول ایوی ایشن نے شہریوں کو ایئرپورٹ کے علاقے کے قریب کوڑا کرکٹ پھینکنے سے سختی سے منع کیا ہے تاکہ کوڑا کرکٹ پر جھپٹنے والے پرندے کسی بڑے حادثے کا باعث نہ بن سکیں ، اس حوالے سے شہریوں کو ذمہ داری کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں