جی ڈی پی گروتھ 5سے 7فیصد ہوگی تو غریبوں کو فائدہ پہنچے گا، شوکت ترین

گروتھ جیسے ہی بڑھتی ہے توکرنٹ اکاؤنٹ خسارہ بڑھ جاتا ہے، مستحکم گروتھ ہوگی تو آئی ایم ایف کی ضرورت نہیں پڑے گی، وزیراعظم کی ترجیح نچلے طبقے کو ریلیف دینا ہے۔وزیرخزانہ کا تقریب سے خطاب

اسلام آباد (حالات نیوز ڈیسک) وزیرخزانہ شوکت ترین نے کہا ہے کہ جی ڈی پی گروتھ 5 سے 7 فیصد ہوگی تو غریبوں کو فائدہ پہنچے گا، گروتھ جیسے ہی بڑھتی ہے توکرنٹ اکاؤنٹ خسارہ بڑھ جاتا ہے،مستحکم گروتھ ہوگی تو آئی ایم ایف کی ضرورت نہیں پڑے گی، وزیراعظم کی ترجیح نچلے طبقے کو ریلیف دینا ہے۔انہوں نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان کو 35 سال سے جانتا ہوں ایماندار آدمی ہے، عمران خان نے مجھے کہا کہ آپ کو یہ عہدہ سنبھالنا ہوگا، یقین ہے عمران خان ملک کو ٹھیک کرے گا، 9 سال نیب عدالتوں کا سامنا کیا اور کیس جیتے۔
انہوں نے کہا کہ آج ہم ایشیاء کی پہلی 25 منڈیوں میں شمار نہیں، ٹیکس اکٹھا نہیں ہورہا ہے ایکسپورٹ میں مسائل ہیں،ملکی گروتھ بڑھانے کیلئے لیکن ایکسپورٹ کی طرف توجہ نہیں، ایکسپورٹ نہیں ہوں گی تو ڈالر کیسے آئیں گے؟ملک کو اپنے پاؤں پر کھڑا کرنے کی کوشش کررہے ہیں، چاہتے ہیں آئندہ ملک کو کبھی آئی ایم ایف کی ضرورت نہ پڑے۔

جیسے ہی گروتھ شروع ہوتی ہے تو کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ بڑھ جاتا ہے،پاور سیکٹر کو ٹھیک کرنا ہے ، گروتھ 5 سے 7 فیصد ہوگی تو غریبوں کو فائدہ پہنچے گا، وزیراعظم نے کہا کہ نچلے طبقے کو ریلیف دینا ہے،احساس پروگرام غریب لوگوں کیلئے ایک مکمل پیکج ہے ،مستحکم گروتھ ہمارا ہدف ہے، مستحکم گروتھ ہوگی تو آئی ایم ایف کی ضرورت نہیں پڑے گی۔

مزید برآں گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر نے روشن ڈیجیٹل اکاؤنٹ سے متعلق تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کرنٹ اکاؤنٹ خسارے پر قابو پاکر معاشی ترقی کو مستحکم بنائیں گے،حکومت کی پہلی ترجیح عوام کو سہولیات فراہم کرناہے، کورونا کے باوجود جی ڈی پی گروتھ 4فیصد تک پہنچ گئی باقی چیلنجز پربھی قابو پانا مشکل نہیں، اوورسیزپاکستانی روشن ڈیجیٹل اکاؤنٹ کے ذریعے سرمایہ کاری اورپراپرٹی کی خریدوفروخت سے منافع کماسکتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں