افغانستان کے صوبہ قندوز کی مسجد میں دھماکا، 50افراد جاں بحق ،100دیگر زخمی

کابل(انٹرنیشنل ڈیسک) افغانستان کے شمالی صوبہ قندوز میں اہل تشیع کی جامع مسجد میں طاقتور اور زور دار دھماکہ کے نتیجے میں 50سے زائد افراد جاں بحق اور 100 دیگر زخمی ہوگئے۔ ابتدائی موصولہ اطلاعات کے مطابق شمالی صوبہ قندوز کے ضلع بندر خان آباد کے علاقہ سید آباد میں واقع اہل تشیع کی ایک جامع مسجد میں جمعہ کے روز مقامی وقت کے مطابق ڈیڑھ بجے اس وقت ایک زوردار دھماکہ ہوا جب اہل تشیع کے سینکڑوں افراد نماز جمعہ پڑھ رہے تھے۔
ابتدائی طور پر بتایا گیا ہے کہ یہ دھماکہ خودکش تھا جس کے نتیجے میں 50 سے زائد افراد جاں بحق اور 100 سے زائد دیگر زخمی ہوگئے۔ عینی شاہدین کے حوالے سے موصولہ اطلاعات کے مطابق دھماکہ کے بعد شدید افراتفری پھیل گئی اور ہر طرف خون ہی خون نظر آ نے لگا۔

مسجد میں چیخ و پکار کی آوازیں سنائی دے رہی تھیں۔ واقعہ کی اطلاع ملتے ہی افغان فورس کے مسلح اہلکاروں نے پہنچ کر امدادی کاروائیاں شروع کیں اور جاں بحق و زخمیوں کو مقامی ہسپتالوں میں پہنچایا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے نے مقامی ہسپتالوں کے ذمہ دار ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ ایک ہسپتال میں اب تک 35 جبکہ دو سرے میں 15 لاشیں لائی گئی ہیں جبکہ دونوں ہسپتالوں میں 100 سے زائد زخمی لائے گئے ہیں۔ ہسپتال ذرائع نے ہلاکتوں میں اضافہ کا خدشہ ظاہر کیا ہے اور بتایا ہے کہ ہلاکتوں کی تعداد کہیں زیادہ ہے۔ ادھر غیر مصدقہ اطلاع کے مطابق دھماکہ میں 100 نمازی جاں بحق ہوگئے ہیں۔
فوری طور پر کسی تنظیم نے دھماکہ کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔ دھماکہ کی تصدیق طالبان ترجمان اور نائب وزیر اطلاعات ذبیح اللہ مجاہد نے بھی کی ہے اور اپنے ٹوئیٹ میں کہا ہے کہ قندوز میں ایک مسجد کو نشانہ بنایا گیا جہاں دھماکہ میں بڑی تعداد نمازی جاں بحق اور زخمی ہوگئے ہیں تاہم انہوں نے تعداد نہیں بتائی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں