کنفگریشن خرابیوں کی وجہ سے سروس بند ہوئی، صارفین کا ڈیٹا لیک نہیں ہوا، فیس بک

نیویارک (انٹرنیشنل ڈیسک) دنیا کی سب سے بڑی سوشل ویب سائٹ نے 4 اور 5 اکتوبر کی درمیانی شب 6 گھنٹے تک دنیا بھر میں اپنی تمام سروسز کی بندش پر وضاحت دیتے ہوئے کہا ہے کہ ’کنفگریشن خرابیوں‘ کی وجہ سے ان کی سروس رکی۔فیس بک، واٹس ایپ اور انسٹاگرام کی سروس پاکستان میں 4 اکتوبر کی شب 8 بجکر 44 منٹ پر متاثر ہونا شروع ہوئی جو رات دیر گئے تک بند رہی اسی طرح دنیا کے بیشتر ممالک میں بھی اسی وقت میں فیس بک اور اس کی ذیلی سوشل اور مسیجنگ ایپ کی سروس بند رہی اور 6 گھنٹے کے بعد رات دیر گئے دنیا بھر میں ان کی سروسز بحال ہونا شروع ہوئیں۔
فیس بک، واٹس ایپ اور انسٹاگرام کی سروس متاثر ہونے سے دنیا کے ساڑھے تین ارب لوگ سوشل اور انٹرنیٹ روابط سے کٹ گئے تھے اور ہزاروں کاروباری اداروں کا کاروبار بھی متاثر ہوا۔

سروس کی بندش کے بعد اب فیس بک نے وضاحتی بیان جاری کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ ان کے ڈیٹا سینٹر کے سسٹم میں ’کنفگریشن خرابیوں‘ کی وجہ سے اس کی سروس بند ہوئی۔فیس بک کی جانب سے بلاگ پوسٹ میں بتایا گیا کہ انجینئرز کی ٹیم نے ہنگامی بنیادوں پر کام کرتے ہوئے پتا لگایا کہ سروسز کیوں بند ہوئیں اور معلوم ہوا کہ کمپنی کے ٹریفک نیٹ ورک اور ڈیٹا سینٹر کے درمیان کچھ آلات کے خراب ہونے کی وجہ سے ان کی سروس بند ہوئی۔

بلاگ میں سروس متاثر ہونے پر صارفین سے معذرت کی گئی اور ساتھ ہی دعویٰ کیا گیا کہ 6 گھنٹے تک بند رہنے والی سروس میں صارفین کے ڈیٹا لیک ہونے یا اکائونٹس ہیک ہونے کی اطلاعات موصول نہیں ہوئیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں