قذافی سٹیڈیم لاہور 8 سال بعد دوبارہ نیشنل ٹی -20 میچز کی میزبانی کرے گا،نیشنل ٹی -20 کا دوسرا مرحلہ کل سے شروع ہوگا

لاہور(بیورو رپورٹ) نیشنل ٹی ٹونٹی کا دوسرا مرحلہ پرسوں بدھ سے قذافی سٹیڈیم لاہور میں شروع ہوگا۔آٹھ سال بعد یہ پہلا موقع ہوگا کہ جب لاہور دوبارہ نیشنل ٹی ٹونٹی کے میچز کی میزبانی کرے گا۔اس سے قبل ٹورنامنٹ کا ایڈیشن 13-2012 قذافی سٹیڈیم لاہور میں کھیلا گیا تھا۔ٹورنامنٹ کے 18ویں ایڈیشن کے ابتدائی 18 میچز پنڈی کرکٹ سٹیڈیم راولپنڈی میں کھیلے گئے۔
لاہور مرحلے کاپہلا میچ میزبان ہوم سٹی سینٹرل پنجاب اور ٹیبل ٹوپر جی ایف ایس سندھ کے مابین کھیلا جائے گا۔دونوں ٹیمیں آٹھ آٹھ پوائنٹس کے ساتھ فی الحال پوائنٹس ٹیبل پر بالترتیب تیسرے اور پہلے نمبر پر براجمان ہیں۔ٹورنامنٹ میں کل بدھ کو شیڈول دوسرے میچ میں ناردرن اور بلوچستان کی ٹیمیں مدمقابل آئیں گی۔

سینٹرل پنجاب کے کپتان بابراعظم 71.5 کی اوسط سے 286 رنز بناکر اب تک ٹورنامنٹ کے ٹاپ سکورر ہیں۔

وہ ایونٹ میں ایک سنچری بنانے کے ساتھ ساتھ ٹی ٹونٹی کرکٹ میں سب سے کم اننگز میں 7000 رنز بنانے والے پہلے بیٹسمین بھی بن گئے ہیں۔کپتان سینٹرل پنجاب بابراعظم کا کہنا ہے یقین ہے کہ لاہور کے میچز میں کھیل کا معیار مزید بڑھے گا۔ یہ ٹورنامنٹ آئی سی سی مینز ٹی -20ورلڈکپ کی تیاریوں کے سلسلے میں ہماری بھرپور معاونت کررہا ہے، اس دوران کچھ نوجوان کھلاڑیوں کی کارکردگی قابل ستائش رہی ہے۔
سینٹرل پنجاب کی ٹیم رواں سال اپنے ہوم گرائونڈ پر ٹائٹل جیتنے کی ہر ممکن کوشش کرے گی۔ٹیبل ٹوپر سندھ کے کپتان سرفراز احمد کا کہنا ہے کہ راولپنڈی میں کھیلا گیا ۔ٹورنامنٹ کا پہلا مرحلہ سندھ کے لیے مثبت رہا اور وہ ٹورنامنٹ کے دوسرے مرحلے میں بھی اسی تسلسل کو برقرار رکھنے کی کوشش کریں گے، امید ہے کہ لاہور کی پچز پر رنز بنانے کے زیادہ مواقع ملیں گے، شرجیل خان اور خرم منظور کی موجودگی میں سندھ کی ٹیم قذافی سٹیڈیم لاہور کی کنڈیشنز کا بھرپور فائدہ اٹھانے کی کوشش کرے گی۔
کپتان ناردرن شاداب خان نے کہا کہ ناردرن ہمیشہ بے خوف کرکٹ کھیلتی ہے اور اسی برانڈ کی بدولت ان کی ٹیم نے گزشتہ دو ایڈیشنز میں بھی بہتر کھیل کا مظاہرہ کیا ۔انہوں نے اعتراف کیا کہ ٹیم کوفیلڈنگ اور کیچنگ کے شعبے میں بہتری کی ضرورت ہے، پرامید ہیں کہ لاہور میں ٹیم تینوں شعبوں میں عمدہ کھیل کا مظاہرہ کرے گی۔کپتان بلوچستان امام الحق کا کہنا ہے کہ بلاشبہ بلوچستان کی ٹیم ٹورنامنٹ کے پہلے مرحلے میں بہتر نتائج حاصل نہیں کرسکی تاہم اسکواڈ میں شامل تمام ارکان پرامید ہیں کہ ان کی ٹیم لاہور میں کھیلے جانے والے ٹورنامنٹ کے دوسرے مرحلے میں متاثرکن کارکردگی کا مظاہرہ کرے گی۔
عامر یامین کپتان سدرن پنجاب کا کہنا ہے کہ راولپنڈی لیگ میں مایوس کن کارکردگی کے بعد اب ان کے پاس لاہور لیگ میں کھونے کے لیے کچھ نہیں ہے۔ گزشتہ سال بھی سدرن پنجاب نے اچھا آغاز نہ ملنے کے باوجود بعدازاں ٹورنامنٹ میں بہتر کھیل کا مظاہرہ کیا تھا۔انہوں نے کہا کہ سدرن پنجاب کی ٹیم میں باصلاحیت کھلاڑی موجود ہیں، یہ تمام کھلاڑی کسی بھی وقت میچ کا پانسہ پلٹنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں