کالعدم ٹی ٹی پی کے مختلف گرو ہوںمیںایسے لوگ بھی ہیںجوپاکستان کے ساتھ اپنی وفا کا عہد نبھانا چاہتے ہیں،وزیر اطلاعات

ایسے لوگوں کو ریاست کو یہ موقع دینا چاہئے کہ وہ زندگی کے دھارے میں واپس آ سکیں، ریاست پاکستان ایک آگ اور خون کے دریا سے ہوکر نکلی ہے،ہم نے ہزاروں لوگوں کی قربانیاں دی ہیں، القاعدہ جیسی دہشت گرد تنظیموں کو شکست دی،ہندوستان کی ریشہ دوانیوں کو مکمل طور پر ختم کیا،الحمداللہ پاکستان پہلے سے زیادہ مضبوط و پرعزم کھڑا ہے، اب آگے چلنے کی ضرورت ہے،چوہدری فواد حسین کا بیان

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات چوہدری فوادحسین نے کہا ہے کہ کالعدم ٹی ٹی پی کے مختلف گرو ہوںمیںایسے لوگ بھی ہیںجوپاکستان کے ساتھ اپنی وفا کا عہد نبھانا چاہتے ہیں، ایسے لوگوں کو ریاست کو یہ موقع دینا چاہئے کہ وہ زندگی کے دھارے میں واپس آ سکیں، ریاست پاکستان ایک آگ اور خون کے دریا سے ہوکر نکلی ہے، ہم نے ہزاروں لوگوں کی قربانیاں دی ہیں، القاعدہ جیسی دہشت گرد تنظیموں کو شکست دی،ہندوستان کی ریشہ دوانیوں کو مکمل طور پر ختم کیا،الحمداللہ پاکستان پہلے سے زیادہ مضبوط و پرعزم کھڑا ہے، اب آگے چلنے کی ضرورت ہے۔
جمعہ کو اپنے بیان میں وزیر اطلاعات نے کہا کہ وزیراعظم پاکستان کے بیان کو لے کر کا فی گفتگو ہورہی ہے،ضروری ہے کہ اس کا ایک پس منظر آپ کے سامنے رکھا جائے۔

چوہدری فواد حسین نے کہاکہ ریاست پاکستان ایک آگ اور خون کے دریا سے ہوکر نکلی ہے، ہم نے ہزاروں لوگوں کی قربانیاں دی ہیں ،ان قربانیوں کے نتیجے میں ہم نے پاکستان میں جہاں القاعدہ جیسی دہشت گرد تنظیموں کو شکست دی وہیں ہندوستان کی ریشہ دوانیوں کو مکمل طور پر ختم کیا۔

انہوں نے کہاکہ الحمداللہ پاکستان پہلے سے زیادہ مضبوط و پرعزم کھڑا ہے، اب آگے چلنے کی ضرورت ہے ۔انہوں نے کہاکہ ریاست کی پالیسیاں ایک مخصوص پس منظر میں بنتی ہیں ،مخصوص حالات میں بنتی ہیں ،انہی مخصوص حالات میں خاندان اور بے شمار لوگ جو پاکستان کے ساتھ وفاداری عہد نہیں نبھا سکے وہ یہ عہد نبھانے واپس آنا چاہتے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ بلوچستان میں 3ہزار سے زیادہ وہ لوگ جو ناراض تھے جو ہندوستان کی ریشہ دوانیوں کا شکار ہوئے وہ واپس آچکے ہیں ،اسی طریقے سے کالعدم ٹی ٹی پی کے مختلف گروہ ہیں ، ان گروہوں میں ایسے لوگ بھی ہیں جو پاکستان کے ساتھ اپنی وفا کا عہد نبھانا چاہتے ہیں، ایک صلح جو ،امن پسند اور آئین کو مان کر آگے چلنے کا پیمان کرنا چاہتے ہیں ،ہمارا ماننا یہ ہے کہ ایسے لوگوں کو ریاست کو یہ موقع دینا چاہیئے کہ وہ زندگی کے دھارے میں واپس آ سکیں ۔
وزیر اطلاعات نے کہا کہ وزیراعظم نے جو آج اصول وضع کئے ہیں جن کے اوپر ہم آگے بڑھنا چاہتے ہیں وہ یہی اصول ہیں کہ ہم اپنے آئین و قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے ان لوگوں کو جو اپنے مخصوص حالات کے پیش نظر پاکستان کے راستے سے جدا ہوگئے تھے انکو واپس راستے پر لاسکیں اور وہ پاکستان کے ایک عام شہری کی حیثیت سے اپنی زندگی گزار سکیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں