35

اغوا کے بعد خاتون سے اجتماعی زیادتی، ملزمان خاتون کو بیچ چوراہے میں پھینک کر فرار

سیالکوٹ (حالات بیورو رپورٹ) سیالکوٹ میں خاتون کو اغوا کے بعد اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا دیا گیا، خاتون کا شوہر پٹرول ڈلوانے گیا تو خاتون کو اکیلا دیکھ کر ملزمان نے گاڑی روکی اور اسے اغوا کر لیا، حالت غیر ہونے پر ملزمان خاتون کو بیچ چوراہے میں پھینک کر فرار ہو گئے۔ تفصیلات کے مطابق پنجاب کے شہر میں ایک خاتون کو اغوا کے بعد مبینہ گینگ ریپ کا نشانہ بنایا گیا اور ملزمان خاتون کو اکبر آباد چوک میں پھینک کر فرار ہو گئے۔ذرائع کے مطابق سیالکوٹ میں تھانہ صدر کی حدود میں خاتون کے اغوا کے بعد مبینہ گینگ ریپ کا واقعہ پیش آیا ، جہاں خاتون کا شوہر پٹرول ڈلوانے پٹرول پمپ پر گیا خاتون کھڑی تھی کہ 5 ملزمان گاڑی روک کرخاتون کو زبردستی گھسیٹتےہوئےاغواکر کے لے گئے۔ریسکیو ذرائع نے بتایا کہ ملزمان خاتون کو اکبر آباد چوک میں پھینک کر فرار ہو گئے جبکہ متاثرہ خاتون کا کہنا ہے کہ 5 ملزمان نے شراب پلاکر زبردستی زیادتی کی۔ڈی ایس پی صدر راجہ زاہد نے کہا کہ خاتون کا میڈیکل کرارہے ہیں ، واقعے کا مقدمہ درج کرلیاگیاہے تاہم واقعہ مشکوک ہے تفتیش کے بعد حقائق سامنے آئیں گے۔یاد رہے رواں ماہ ہی پنجاب میں 2 خواتین کے ساتھ زیادتی اور لڑکے سے بدفعلی کا واقعات رونما ہوئے تھے ، جہاں شیخوپورہ میں خاتون کو مبینہ زیادتی کے بعد زندہ جلانے کی کوشش کی گئی جبکہ جہلم میں لڑکے کے ساتھ بدفعلی، منڈی بہاﺅالدین میں طالبہ سے دست درازی اور گجرات میں لڑکی کو اجتماعی زیادتی کے بعد قتل کردیا گیا۔بعد ازاں وزیراعلیٰ پنجاب نے واقعےمیں ملوث ملزمان کی جلدگرفتاری کا حکم دیتے ہوئے متاثرہ خاندان کو ہر صورت انصاف فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی۔ آر پی او نے وزیراعلیٰ پنجاب کی ہدایت پر ملزمان کی گرفتاری کے لئے خصوصی ٹیمیں تشکیل دے دیں۔اس سے قبل نوعمر عالمہ لڑکی کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا دیا گیا تھا۔جنگ اخبار میں شائع رپورٹ کے مطابق ٹنڈو جام محمد سے لڑکی کو اغوا گیا تھا لڑکی کو جمعرات کو ڈگری کی عدالت میں پیش کیا گیا۔متاثرہ لڑکی نے بیان ریکارڈ کرواتے ہوئے بتایا کہ شاہد جٹ، منور جٹ اور لال میر کاتیار نے مجھے اغوا کیا۔اغوا کرنے کے بعد ٹھٹھہ لے جایا گیا جہاں لال میر کاتیار نے اسے ایک جھونپڑی میں رکھا جہاں اس کی بیوی بھی موجود تھی۔وہاں ملزم لال میر کاتیار دن دن تک اس کے ساتھ زیادتی کرتا رہا،بعدازاں ایک جعلی نکاح نامہ تیار کروایا جس میں میرا نام ارم درج کیا گیا۔لڑکی کے مطابق اس کے اغوا میں ملوث شاہد جٹ اس کے فروخت کیے جانے کی رقم لینے پہنچا لیکن ان کا رقم پر معاملہ طے نہ ہو سکا۔جس پر شاہد جٹ مجھے دوبارہ واپس لے ا?یا اور جھڈو کے قریب ایک مسافر خانے میں چھوڑ دیا۔ڈگری کی عدالت نے لڑکی کو اس کے والدین کے حوالے کر دیا جبکہ گرفتار ملزم کو جیل بھیج دیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں