24

راولپنڈی ؛ مدرسے کے معلم کی 14 سالہ لڑکے سے زیادتی، ملزم گرفتار

راولپنڈی ( حالات کرائم ڈسک) صوبہ پنجاب کے شہر راولپنڈی میں پولیس نے لڑکے سے زیادتی کرنے والے مدرسے کے معلم کو گرفتار کرلیا۔ تفصیلات کے مطابق راولپنڈی میں مدرسے کے معلم نے 14 سالہ لڑکے کو مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا ، اس حوالے سے متاثرہ بچے کے والد نے پولیس کو اپنے بیان میں بتایا کہ 4 روز قبل اپنے بچے کو مدرسے میں داخل کروایا جہاں قاری عثمان نے میرے بیٹے کو زیادتی کا نشانہ بنا دیا ، جس کی اطلاع ایس ایچ او کینٹ کو دی تو پولیس نے فوری کاروائی کرتے ہوئے ملزم عثمان کو گرفتار کر لیا۔پولیس کے مطابق ملزم قاری عثمان کے خلاف متاثرہ بچے کے والد کی مدعیت میں مقدمہ درج کرلیا ہے جب کہ زیادتی کا شکار ہونے والے لڑکے کا میڈیکل بھی کروایا جارہا ہے ، جس کے بعد ملزم کو ٹھوس شواہد کے ساتھ چالان عدالت میں پیش کرکے قرار واقعی سزا دلوائی جائے گی۔دوسری جانب راولپنڈی میں ہی دس سالہ بچے کو مبینہ زیادتی کے بعد قتل کر دیا گیا ، گلزار قائد کا رہائشی ثنائ اللہ گذشتہ روز لاپتہ ہوا تھا، لیکن بچے کی لاش گلزار قائد ریلوے ٹریک کے قریب سے برآمد ہوئی جس پر پولیس کو مطلع کیا گیا تو پولیس نے موقع پر پہنچ کر لاش کو تحویل میں لیا، پولیس حکام نے کہا کہ بچے کو مبینہ زیادتی کے بعد قتل کیا گیا ، بچہ غریب گھرانے سے تعلق رکھتا ہے، واقعہ کی اطلاع ملتے ہی پولیس کی ٹیم نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر لاش پوسٹ مارٹم کے لیے ہسپتال منتقل کردی ، پوسٹ مارٹم رپورٹ سے بچے کی موت کی وجہ اور زیادتی کا تعین ہو سکے گا۔ائیرپورٹ پولیس نے دعویٰ کیا کہ پولیس کی تحقیقاتی ٹیم نے فوری کارروائی کرتے ہوئے ملزم کاشف کو حراست میں لے لیا ہے، بچے کے لاپتہ ہونے کی رپورٹ گذشتہ رات پولیس کو کی گئی تھی، جس پر پولیس نے سی سی ٹی وی فوٹیجز کی مدد سے ملزم کاشف کو شناخت کیا اور ٹریس کرکے حراست میں لے لیا ، ابتدائی تحقیقات میں انکشاف ہوا کہ ملزم نے خاندانی تنازعہ کی وجہ سے معصوم ثناءللہ کو قتل کیا، ملزم نے اپنے ابتدائی بیان میں بچے کو اس کے گھر سے لے جانے اور قتل کرنے کا انکشاف کیا ، اور بتایا کہ بچے کی لاش کو ریلوے ٹریک کے قریب جھاڑیوں میں چھپا دیا ، واقعہ کا مقدمہ مقتول ثناءاللہ کی والدہ کی مدعیت میں درج کردیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں