142

لاہور ، میڈیکل کی طالبہ کو گن پوائنٹ پر جنسی زیادتی کا نشانہ بنا دیا گیا

لاہور (میڈیا ڈسک) صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور میں میڈیکل کی طالبہ کو گن پوائنٹ پر جنسی زیادتی کا نشانہ بنا دیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق یہ شرمناک واقعہ لاہور کے علاقے نشتر کالونی میں پیش آیا جہاں میڈیکل کی ایک طالبہ کو گن پوائنٹ پر زیادتی کا نشانہ بنا دیا گیا۔ بتایا گیا ہے کہ ملزم نے متاثرہ لڑکی کو وزیراعظم قرضہ سکیم سے قرض دلوانے کے بہانے بلوایا اور گن پوائنٹ پرایک مکان میں لے گیا جہاں اس درندہ صفت شخص نے لڑکی کو اپنی ہوس کا نشانہ بنا دیا۔
ایس پی انویسٹی گیشن ماڈل ٹاو¿ن ذوہیب نصر اللہ رانجھا نے بتایا کہ متاثرہ لڑکی کی نشاندہی پر انچارج جینڈر سیل ماڈل ٹاو¿ن صدف رشید نے ٹیم کے ہمراہ ا?پریشن کرکے ملزم حبیب اللہ کو گرفتار کرلیا گیا ہے جب کہ میڈیکل رپورٹ میں بھی متاثرہ لڑکی سے جنسی زیادتی ثابت ہو چکی ہے۔

علاوہ ازیں لاہور میں ہی ایک 29 سالہ ماڈل کو بھی قتل کردیا گیا ، پولیس نے گھرسے برہنہ حالت میں لاش برآمد کرلی ، لاہور کے علاقے ڈی ایچ اے فیز 5 میں واقع ایک گھر سے 29 سالہ ماڈل کی تشدد زدہ لاش ملی ہے، جس کو ممکنہ طور پر گلہ دبا کر قتل کیا گیا خاتون کی لاش گھر سے برہنہ حالت میں ملی جس پر پولیس نے زیادتی اور ڈکیتی سمیت مختلف پہلوو¿ں پرتفتیش شروع کر دی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ 29 سالہ ماڈل کی شناخت نایاب کے نام سے ہوئی جو کہ ڈی ایچ اے فیز فائیو کے ایک گھر میں اکیلے رہائش پذیر تھی، 29 سالہ نایاب دو بھا?یوں کی سوتیلی بہن تھی ، جس کو نامعلوم افراد نے گھر میں گھس کر تشدد کا نشانہ بنایا اور گلہ دبا کر موت کے گھاٹ اتار دیا جب کہ قتل کرنے کے بعد ملزمان موقع سے فرار ہوگئے۔ بتایا گیا ہے کہ پولیس نے ابتدائی ضروری کارروائی کے بعد لاش کو ایدھی ایمبولینس کے ذریعہ مردہ خانے منتقل کردیا جب کہ قتل کا مقدمہ مقتولہ کے سوتیلے بھائی محمد علی ناصرکی مدعیت میں درج کیا گیا ، جس نے بتایا کہ بہن نایاب کو گزشتہ رات کھانا کھانے کے بعد گھر چھوڑا تھا لیکن جب صبح سویرے بہن سے ملنے گھر گیا تو دروازے بند تھے اور گھرکی پچھلی سائیڈ کی کھڑکی ٹوٹی ہوئی تھی ، گھرمیں داخل ہوا تو سامنے بہن کی لاش پڑی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں