فرانسیسی صدر کو تھپڑ رسید کرنے کا واقعہ، ملزم سے متعلق اہم انکشافات سامنے آ گئے

پیرس (حالات میڈیا ڈیسک ) فرانسیسی صدر کو شہری کی جانب سے تھپڑ رسید کرنے کا واقعہ، گرفتار شخص کے گھر سے ہٹلر کے منشور پر مشتمل سوانح عمری، اسلحہ اور فوجی گیمز برآمد، ملزم سے متعلق اہم انکشافات سامنے آ گئے- غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق پولیس کا کہنا ہے کہ فرانسیسی صدر کو تھپڑ مارنے والا شخص ڈیمین تاریل انارکی پسند اور پرانے خیالات کا مالک ہے۔
رپورٹ کے مطابق ملزم کی تلاشی کے دوران پولیس کو 28 سالہ شخص کے گھر سے نازی رہنما ہٹلر کے منشور پر مشتمل سوانح عمری، اسلحہ، فوجی گیمز اور سویت فلیگ ملا ہے۔ملزم کے گھر سے قرون وسطیٰ کے لباس بھی برا?مد ہوئے، اور وہ نائٹ کا کردار بھی ادا کرتا رہا ہے۔ ڈیمین ترل نے دائیں بازو کے یوٹیوب گروپس کو بھی سبسکرائب کیا ہوا ہے۔
گزشتہ روز ڈیمین نے فرانسیسی صدر میکرون کو تھپڑ رسید کرنے سے پہلے ‘مردہ باد میکرون‘ کا نعرہ بھی لگایا تھا۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز یہ خبر سامنے آ ئی تھی کہ فرانس کے صدر میکرون کو فرانسیسی شہری نے تھپڑ ماردیا۔ غیرملکی میڈیا کے مطابق فرانسیسی صدر ایمانوئیل میکرون ملک کے جنوب مشرقی علاقے میں واقع ڈروم ریجن کے دورے پر تھے جہاں انہیں ایک 43 سالہ شخص نے اس وقت تھپڑ جڑدیا جب وہ میڈیا سے بات چیت کرنے کیلئے آتے ہوئے عوام سے ہاتھ ملانے کیلئے آگے بڑھ رہے تھے ، واقعے کے فوری بعد سیکیورٹی اہلکاروں نے تھپڑ مارنے والے شخص سمیت 2 افراد کو فوری گرفتار کر لیا تاہم شہری کی جانب سے میکرون کو تھپڑ مارے جانے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی۔
سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ فرانس کے صدر ایمانوئیل میکرون ایک شخص سے ہاتھ ملا رہے ہوتے ہیں کہ اس دوران وہ ان کا ہاتھ پکڑ کر ناصرف انہیں تھپڑ رسید کرتا ہے اس کے ساتھ ساتھ 43 سالہ فرانسیسی شہری نے تھپڑ مارتے وقت اپنے ملک کے صدر کے نظریات اور ان کی پالیسیوں کے خلاف نعرہ بھی لگایا ، اس موقع پر فرانسیسی صدر کی سیکیورٹی پر موجود اہلکاروں کے میکرون کو فوری اپنے حصار میں لے لیا جب کہ تھپڑ مارنے والے شخص کو گرفتار کر لیا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں