اسرائیل کیخلاف اعلانِ جنگ کر سکتے ہیں‘ پیوٹن نے نیتن یاہو کو وارننگ دے دی

ماسکو ( انٹرنیشنل میڈیا ڈیسک ) روس کی صدر ولادیمیر پیوٹن نے اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کو وارننگ دی ہے کہ روس اسرائیل کے خلاف اعلانِ جنگ کر سکتا ہے۔ برطانوی اخبار کے مطابق روسی صدر ولادیمیر پیوٹن نے غزہ میں جاری اسرائیلی جارحیت پر جنگ بندی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسرائیل اور فلسطین میں ہونے والے پر تشدد واقعات کو فوراً روکا جائے جن میں بچوں سمیت بڑی تعداد میں پ±رامن افراد کی جانیں گئی ہیں، مسئلے کا حل اقوام متحدہ اور سلامتی کونسل کی قراردادوں کی روشنی میں تلاش کیا جائے۔
دوسری طرف ترک صدر رجب طیب اردوان نے اسرائیل کو دہشت گرد قرار دے دیا ، انہوں نے کہا کہ اسرائیل کی حمایت کرنے پر جو بائیڈن کے ہاتھ فلسطینیوں کے خون سے رنگے ہوئے ہیں، ا?ج ہم نے دیکھا کہ جوزف بائیڈن نے اسرائیل کو ہتھیار فروخت کرنے کی ڈیل پر دستخط کیے ہیں، فلسطینیوں پر ظلم و ستم، اذیت کے ساتھ ساتھ ان کا خون بہایا جا رہا ہے،بائیڈن اپنے خون ا?لود ہاتھوں سے تاریخ لکھ رہا ہے، امریکا نے اپنے رویہ سے ہمیں یہ کہنے پر مجبور کیا کیوں کہ فلسطینی سلطنت عثمانیہ کے خاتمے کے بعد امن کے منتظر ہیں، اب ہم مزید خاموش نہیں رہ سکتے اور ہم فلسطین کی حمایت سے پیچھے نہیں ہٹ سکتے۔
علاوہ ازیں چین نے امریکہ سے اسرائیلی حملوں کو رکوانے کے لیے اپنا کردار ادا کرنے کا مطالبہ کر دیا، چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان ڑاو¿ لی جیان نے پریس کانفرنس میں کہا کہ اسرائیل اور فلسطین کے مابین اس وقت 2014 کے بعد سے اب تک کا سب سے بڑا تنازع پیدا ہوا ہے جس کے حل کے لیے امریکہ کو اپنی ذمہ داریاں نبھانی چاہیئے ، اسرائیل کو تحمل سے کام لیتے ہوئے مسلمانوں کے خلاف تشدد، دھمکیوں اور اشتعال انگیزی کا سلسلہ بند کرنا چاہیئے۔
غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق چینی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ فلسطین میں متاثرین کو امداد کی اشد ضرورت ہے اور انسانی ہمدردی کے تحت تمام ممالک مل کر فلسطینی عوام کے دکھوں کا مداوا کریں، چین نے سلامتی کونسل میں 2 بار مشاورت کی جس کا مسودہ بھی تیار ہے جس کی بنیاد پر وزیر خارجہ وانگ ای نے 16 مئی کو سلامتی کونسل میں کھل کر اظہار خیال کیا اور 2 ریاستی حل بھی پیش کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں