35

پمز اسپتال نے وزارت صحت کو متبادل انتظامات کیخلاف خط لکھ دیا

اسلام آباد کے پمز اسپتال نے وزارت قومی صحت سے کورونا مریضوں کے لیے متبادل اسپتالوں میں انتظامات کرنے کی درخواست کردی۔

اسلام آباد کے پمز اسپتال نے وزارت نیشنل ہیلتھ سروسز کو خط لکھ کر کورونا مریضوں کے لیے متبادل اسپتالوں میں انتظامات کی درخواست کردی۔

خط میں کہا گیا ہے کہ پمز اسپتال میں کورونا مریض کے داخلے گنجائش سے زیادہ ہوچکے ہیں، وبائی مرض کے وارڈ اور ایمرجنسی پر شدید دباؤ ہے۔

خط کے متن کے مطابق کورونا مریض داخلے کے لیے ایمرجنسی رومز میں انتظار کررہے ہیں، مریضوں میں اضافے کے باعث پمز اسپتال میں آکسیجن پریشر میں کئی گنا اضافہ ہوچکا۔

خط میں کہا گیا کہ پمز اسپتال میں طےشدہ آپریشن غیرمعینہ مدت کے ملتوی کئے جاچکے، کورونا مریضوں کو دیگر آئی سی یو میں منتقل کیا جائے گا۔

پمز انتظامیہ کے خط میں کہا گیا کہ آکسیجن پریشر برقرار رہ سکنے والے آئی سی یو میں کورونا مریض منتقل کئے جائیں گے، وزرات قومی صحت سے درخواست ہے وفاق کی دیگر طبی سہولیات کو مضبوط کرے۔

خط میں کہا گیا کہ کوروناکےمریضوں کےعلاج کے لیے دیگر طبی مراکز میں سہولیات بڑھائی جائیں، اس وقت اسپتال میں 9 کورونا مریض وینٹی لیٹرز پر ہیں۔

پمز اسپتال انتظامیہ کے مطابق کورونا وارڈ میں داخل مریضوں کی تعداد 150 ہے، اسپتال ایمرجنسی میں 30 مریض بیڈز کے انتظار میں ہیں۔

خط میں کہا گیا کہ کورونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کی اکثریت ہائی فلو آکسیجن پر ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں