48

لاک ڈاؤن کے خدشات، اسٹاک مارکیٹ میں شدید مندی، سرمایہ کاروں کے اربوں روپے ڈوب گئے

کراچی (این این آئی)پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں کاروباری ہفتے کا اختتام مایوس کن رہا اورمسلسل تیسرے روز جمعہ کو بھی مندی کا تسلسل برقرار رہنے کے باعث کے ایس ای100انڈیکس مزید 222.85پوائنٹس کی کمی سے44706.76پوائنٹس کی سطح پرآ گیا جب کہ61.26فیصد کمپنیوں کے شیئرز کی قیمتوں میں کمی ریکارڈ کیگئی جس کے نتیجے میں سرمایہ کاروں کو44ارب 92کروڑ85لاکھ روپے کا نقصان اٹھانا پڑا-حصص کی لین دین کے لحاظ سے کاروباری حجم بھی جمعرات کی نسبت 26.88فی صدکم رہا۔ گزشتہ روز ٹریڈنگ کے آغاز سے ہی سرمایہ کاروں کی جانب سے حصص فروخت کا دباوٗ دیکھنے میں آیا جس کے

باعث مارکیٹ میں مندی چھاگئی اوردوران ٹریڈنگ کے ایس ای100انڈیکس44360.51 پوائنٹس کی نچلی سطح پر آگیا بعد میں ریکوری آئی اور انڈیکس کی 44400،44500،44600اور44700کی نفسیاتی حدیں بحال ہوگئیں لیکن لیکن مندی کا رجحان غالب رہا اور کاروبار کے اختتام پر کے ایس ای100انڈیکس 222.85پوائنٹس کی کمی سے44706.76پوائنٹس کی سطح پربند ہواجب کہ کے ایس ای30انڈیکس98.70پوائنٹس کی کمی سے18726.47پوائنٹس اور کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس174.75پوائنٹس کی کمی سے30293.87پوائنٹس کی سطح پرآگیا۔گزشتہ روز مجموعی طور پر364کمپنیوں کے شیئرز کا کاروبار ہوا جن میں 126کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ 223میں کمی اور15میں استحکام رہا۔مندی کے باعث مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت78کھرب99ارب42کروڑ51لاکھ روپے سے گھٹ کر78کھرب34ارب22کروڑ11لاکھ روپے ہوگئی۔گزشتہ روز نمایاں کاروباری سرگرمیوں کے لحاظسے گیٹرن انڈسٹریز33.36روپے کے اضافے سے478.08روپے اورمحمود ٹیکسٹائیل30.08روپے کے اضافے سے490.08روپے ہوگئی جب کہ کولگیٹ پامولو208.99روپے کی کمی سے2590.01روپے اوروائتھ پاک 30.06روپے کی کمی سے929.95روپے ہوگئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں